121

بے مقصد ای نسدا جاویں

پڑھ کتاباں رٹے لا لئے
ڈگری تمغے گل وچ پا لئے
ہن دنیا وچ پھسدا جاویں
بے مقصد ای نسدا جاویں

تھاں تھاں کاروبار سجا لئے
دولت دے انبار لگا لئے
دوڑ تیری پر رکنی ناہیں
ہوس کدی وی مکنی ناہیں

جین دا مقصد پل جاویں گا
دوڑ دوڑ کے رل جاویں گا
مشکل تیری ود دی جانیں
نیندر تیری کٹ دی جانیں

پیسے تیرے نال نیں جانے
ماپے ٹر گئے مڑ نیں آنے
پاویں رو رو ہوکاں ماریں
کلمے پڑ پڑ پھوکاں ماریں

بچیاں دا بچپن وی کھویں
فیر توں کلا بہ کے رویں
وقت پرانا یاد آوے گا
درد کلیجا کھا جاوے گا

کرنی ایں جے ٹھنڈی چھاتی
سونا ایں جے رج کے راتی
اج توں گھر نوں چھیتی آویں
ماپیاں نال کجھ وقت بتاویں

حال سنیں تے حال سناویں
دل تے چڑھیا بوجھ کٹاویں
بچیاں اپنے کول بٹھاویں
جو توں سکھیا کوٹ پیاویں
لاڈ اٹھاویں دل بہلاویں
کٹ کے اپنے سینے لاویں

پین پرا تے ماپے چھڈ کے
جس نے خون دے ناتے وڈ کے
تینوں منیا سر دا سائیں
توں وی رشتہ توڑ نبھائیں

اودے سارے دکھ سکھ ونڈیں
رشتہ دل دا دل نال گنڈیں
اپنے خول نوں چھل کے ویکھیں
اپنے نال وی مل کے ویکھیں

ویر تیرے نے نعمت رب دی
پیناں بنا خوشی نیں لب دی

خوشیاں ونڈ تے خوشیاں پا لے
مانی رب نوں یار بنا لے

ہر لمحہ توں ہس کے جی لے
پیار دی گڑوی پھڑ کے پی لے

اپنے اج توں ہو جا راضی
ایس جیون دی جت لے بازی
ایس جیون دی جت لے بازی…

سوچیے گا ضرور۔۔۔

اور آگاہ ضرور کیجیئے گا کہ کیا رائے ہے آپ سب کی؟

پر جواب دینے سے پہلے ہم سب خود کو آئینہ میں ضرور دیکھنا ہو گا۔

حَسْبِيَ اللَّهُ لا إِلَـهَ إِلاَّ هُوَ عَلَيْهِ تَوَكَّلْتُ وَهُوَ رَبُّ الْعَرْشِ الْعَظِيمِ

اللہ سبحان وتعالی ہم سب کو مندرجہ بالا باتیں کھلے دل و دماغ کے ساتھ مثبت انداز میں سمجھنے، اس سے حاصل ہونے والے مثبت سبق پر صدق دل سے عمل کرنے کی اور ساتھ ہی ساتھ ہمیں ہماری تمام دینی، سماجی و اخلاقی ذمہ داریاں بطریق احسن پوری کرنے کی ھمت، طاقت و توفیق عطا فرما ئے۔ آمین!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.