224

کچھ بھی نہیں یہاں بتانے کو…

بتانے سے پہلے ہی
اتنا کچھ دیکھنے، سننے، سہنے کو موجود ہے
تو پھر
مسئلہ یہ ہے کہ بھلائیں کیسے؟
کبھی اپنی ذات سے وابستہ حالات و واقعات،
کبھی ارض پاک سے وابستہ حالات و واقعات،
کبھی اسلامی دنیا سے وابستہ حالات و واقعات،
آئے روز کوئی نہ کوئی المیہ دیکھنے، سننے و دل چھلنی کرنے کو ملتا ہے۔
تو پھر آخر کیسے ؟
کسی کے پاس کوئی حل ہو تو بتائیں۔ ۔ ۔

(تحریر – محترم محمد شیراز جاوید اعوان)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.