92

ماہ رمضان، خود تشخیصی و تبدیلی کا دوسرا دن۔۔۔

رمضان کے مہینے میں وقت کا ہر لمحہ مبارک اور قیمتی ہے۔ یہ اللہ کا تقرب حاصل کرنے کا ایک سنہری موقع ہے۔ اس سے پہلے کہ یہ رحمت و مغفرت کا ماہ مبارک ختم ہو جائے ہمیں کوشش کرنی چاہےح کہ ہم اللہ تعالی کا زیادہ سے زیادہ زکر و عبادت کرکے اللہ تعالی کی رحمتیں و نعمتیں حاصل کر سکیں۔ بے جاء یا فضول باتوں/گفتگو میں اپنا وقت برباد کرنے کی بجائے زیادہ سے زیادہ تلاوت قرآن کرنا چاہےک اور زیادہ سونے کی بجائے نوافل ادا کرنے چاہے ۔

” جو شخص بھی قیام کی حالت میں دس آیات پڑھتا ہے اس کو بخشا ہوا لکھ دیا جاتا ہے، جو قیام کی حالت میں سو آیات پڑھتا ہے اس کو متقی لکھ دیا جاتا ہے اور جو قیام کی حالت میں ہزار آیات پڑھتا ہے اس کو منقناترین (ڈھیروں اعمال صالحہ والا) میں لکھ دیا جاتا ہے۔” (ابو داؤد اور ابن حبان سے روایت کیا۔ صحیح بخاری رحمہ اللہ تعالی -الترغیب، 635)

جہاں تک قرآن مجید کی تلاوت کے انعامات کا تعلق ہے تو وہ بہت اور بے حساب ہیں۔ ترمذی کی ایک مستند حدیث میں کچھ یوں بیان ہے کہ،
“جو شخص اللہ کی کتاب سے ایک لفظ پڑھتا ہے، وہ ایک اجر/ثواب پائےگا اور یہ کہ اجر کو دس سے ضرب دیا جائے گا۔ میں یہ نہیں کہتا کہ “الف، لام، میم” ایک حرف ہے بلکہ الف ایک حرف، میم ایک حرف اور لام ایک حرف ہر حرف پر ایک نیکی اور ایک نیکی کا اجر دس گنا ہے۔”

چنانچہ ہمیں قرآن مجید کی زیادہ سے زیادہ تلاوت کر کے اس میں موجود امتیازات وخصوصیات حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ اپنے لےا زیادہ سے زیادہ اجر وثواب بھی کمائیں۔

سوچیئے گا ضرور۔۔۔
اور آگاہ ضرور کیجیئے گا کہ کیا رائے ہے آپ سب کی؟
پر جواب دینے سے پہلے ہم سب خود کو آئینہ میں ضرور دیکھنا ہو گا۔
حسبی اللہ لا الہ الا ھو علیہ توکلت وھو رب العرش العظیم (آیت 129، سورتہ توبہ – القرآن)
اللہ سبحان وتعالی ہم سب کو مندرجہ بالا باتیں کھلے دل و دماغ کے ساتھ مثبت انداز میں سمجھنے، اس سے حاصل ہونے والے مثبت سبق پر صدق دل سے عمل کرنے کی اور ساتھ ہی ساتھ ہمیں ہماری تمام دینی، سماجی و اخلاقی ذمہ داریاں بطریق احسن پوری کرنے کی ھمت، طاقت و توفیق عطا فرما ئے۔ آمین!

(تحریر – محترم محمد شیراز جاوید اعوان )

نوٹ: لکھ دو کا اپنے تمام لکھنے والوں کے خیالات سے متفق ہونا قطعی ضروری نہیں۔
اگر آپ بھی لکھ دو کے پلیٹ فارم پر لکھنا چاہتے ہیں تو اپنا پیغام بذریعہ تصویری، صوتی و بصری یا تحریری شکل میں بمعہ اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر، لنکڈان، فیس بک اور ٹویٹر آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعارف کے ساتھ admin@likhdoo.com پر ارسال کردیجیے۔

=====================================================================

Ramadan Reinspired – Day Two….

The time during the month of Ramadan is blessed and precious. It is a golden opportunity to seek closeness to Allah. Before we know it, this month of mercy and forgiveness will be over. We should try and spend every moment possible in the worship of Allah so that we can make the most of this blessing. Avoid getting into unwanted conversations instead use the time to recite a lot of Quran and avoid oversleeping so that you get enough time to pray the nafil prayers.

“Whoever recites ten ayat (verses) in qiyam will be recorded as one of the forgetful. Whoever recites a hundred ayat (verses) in qiyam will be recorded as one of the devout, and whoever prays a thousand ayat (verses) in qiyam will be recorded as one of the muqantareen (those who pile up good deeds).” (Reported by Abu Dawood and Ibn Hibbaan. It is a hasan report. Saheeh al-Targheeb, 635).

As for the rewards of reciting the Quran, they are many. An authentic hadith in At-Tirmithee states:
“Whoever reads a letter from the Book of Allah, he will have a reward. And that reward will be multiplied by ten. I am not saying that “Alif, Laam, Meem” is a letter, rather I am saying that “Alif” is a letter, “laam” is a letter and “meem” is a letter.” So increase your recitation of the Quran to gain these merits, and to gain the following merit as well.”

Do Think About it!
And Let us Know What’s Your Opinion/Reviews?
But Before Answering, All of us have to Look Ourselves into The Mirror.
حسبی اللہ لا الہ الا ھو علیہ توکلت وھو رب العرش العظیم – القرآن سورتہ توبہ، آیت 129
“Sufficient for me is Allah ; there is no deity except Him. On Him I have relied, and He is the Lord of the Great Throne.” Al Quran – 9:129
O Allah! Give all of us the courage, strength and ability; that we get understand and act upon the Positive lesson in this message with positively open heart & mind. And sincerely follow all our religious, social and moral responsibilities as well. Aamen

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.