103

ماہ رمضان، خود تشخیصی و تبدیلی کا نواں دن۔۔۔

یہ ماہ مبارک مسلمانوں کی حوصلہ افزائی کرتا ہے ان کے کردار کو مزید نکھارنے اورخوبصورت بنانے اور بطور خاص معاشرئے میں لوگوں کے ساتھ ملنے ملانے کے آداب کے بارئے میں۔ جب کوئی ہماری مدد یا رہنمائی کرتا ہے تو اس کا ‘ شکریہ ‘ ادا کرنا مہذب آداب میں شمار ہوتا ہے۔ تاہم کیا کوئی لفظ ‘ شکریہ ‘ سے بھی بہتر ہے؟
آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ،
“اور جو کوئی تمہارے ساتھ اچھائی کرئے اور آپ اُسے کہیں جزاک اللہ خیراََ تو یہ اُس کے شکریہ کے لیے بہت کافی ہے۔” (ترمذی)
جب ہم جزاک اللہ خیرا کہتے ہیں تو ہم اصل میں اس شخص کے لیے اللہ تعالی سے بہتر اجر و ثواب کی دعا مانگ رہے ہوتے ہیں۔ جزاک اللہ خیرا کہنا اس ‘ شکریہ ‘ کہنے سے بہت زیادہ قیمتی بہتر ہے کیونکہ ایسا کہنے سے دنیا اور آخرت دونوں کے لیے ہم اس شخص کی خوشی اور رحمت مانگتے ہیں۔ دنیا اور آخرت دونوں کے لیے اس شخص کی خوشی اور رحمت مانگتے ہیں۔

سوچیئے گا ضرور۔۔۔
اور آگاہ ضرور کیجیئے گا کہ کیا رائے ہے آپ سب کی؟
پر جواب دینے سے پہلے ہم سب خود کو آئینہ میں ضرور دیکھنا ہو گا۔
حسبی اللہ لا الہ الا ھو علیہ توکلت وھو رب العرش العظیم (آیت 129، سورتہ توبہ – القرآن)
اللہ سبحان وتعالی ہم سب کو مندرجہ بالا باتیں کھلے دل و دماغ کے ساتھ مثبت انداز میں سمجھنے، اس سے حاصل ہونے والے مثبت سبق پر صدق دل سے عمل کرنے کی اور ساتھ ہی ساتھ ہمیں ہماری تمام دینی، سماجی و اخلاقی ذمہ داریاں بطریق احسن پوری کرنے کی ھمت، طاقت و توفیق عطا فرما ئے۔ آمین!

(تحریر – محترم محمد شیراز جاوید اعوان )

نوٹ: لکھ دو کا اپنے تمام لکھنے والوں کے خیالات سے متفق ہونا قطعی ضروری نہیں۔
اگر آپ بھی لکھ دو کے پلیٹ فارم پر لکھنا چاہتے ہیں تو اپنا پیغام بذریعہ تصویری، صوتی و بصری یا تحریری شکل میں بمعہ اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر، لنکڈان، فیس بک اور ٹویٹر آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعارف کے ساتھ admin@likhdoo.com پر ارسال کردیجیے۔

=====================================================================

Ramadan Re-inspired: Day Nine…

In this blessed month, Muslims are encouraged to beautify & develop their characters, especially their manners when dealing with people. Conveying gratitude by saying ‘thanks’ when someone has done us a favor is a part of Good manners. However is there something better than just thanks?
The Prophet (SWS) said:
“Whoever has a favour done for him and says to the one who did it, ‘Jazak Allaahu khayran,’ has done enough to thank him.” (Tirmidhi)
When we say JazakAllahu Khayran, we are actually making Du’a for the person by asking Allah to reward them with good. This is much more valuable than just saying ‘thanks’, because it might be a means of bringing them happiness in this world and in the Hereafter.

Do Think About it!

And Let us Know What’s Your Opinion/Reviews?
But Before Answering, All of us have to Look Ourselves into The Mirror.
حسبی اللہ لا الہ الا ھو علیہ توکلت وھو رب العرش العظیم – القرآن سورتہ توبہ، آیت 129
Sufficient for me is Allah ; there is no deity except Him. On Him I have relied, and He is the Lord of the Great Throne. Al Quran – 9:129
O Allah! Give all of us the courage, strength and ability; that we get understand and act upon the Positive lesson in this message with positively open heart & mind. And sincerely follow all our religious, social and moral responsibilities as well. Aamen

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.