152

ماہ رمضان ، خود تشخیصی و تبدیلی کا انتیسواں دن۔ ۔ ۔

ماہ رمضان بھلے ہی ہم کو چھوڑ کر جا راہ ہے لیکن اس کو اپنے اندر سے چھوڑ کر مت جانے دیجئیے گا۔
جی ہاں، افسوس ہے پر ماہ رمضان تقریبا مکمل ہونے کو ہے ۔ بے شک ہم سبھی کو اداسی، خالی پن اور اس بات کا بھی پچھتاوا ہے ہم اس کو جتنا بہتر بنا و گزار سکتے تھے ویسا پورے سے نہ کر پائے۔ ہم ماہ رمضان کے اس ایک ماہ کے فضائل و رحمتیں پورے سال بھی محسوس و حاصل کر سکتے ہیں اپنے اس گزرے ماہ رمضان کے اچھے اعمال و فضائل کو جاری رکھتے ہوئے اور بری باتوں و کاموں سے خود کو بچاتے ہوئے۔
جی ہاں، تہجد کی نماز جاری و ساری رکھی جائے۔ جی ہاں، آپ اپنے سجدے میں زیادہ دیر رک سکتے ہیں۔ جی ہاں، آپ اپنی ہر نماز کے بعد تلاوت قرآن پاک کر سکتے ہیں۔ جی ہاں، آپ نفلی نمازیں و عبادات کر سکتے ہیں۔ جی ہاں، آپ اللہ سبحانی وتعالی کی بارگاہ میں گڑگڑا و فریاد کر سکتے ہیں۔ جی ہاں، آپ اللہ کی راہ میں خرچ کر سکتے ہیں۔ جی ہاں آپ نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت کے مطابق سوموار اور جمعرات کے روزئے بھی رکھ سکتے ہیں۔
اگر آپ واقعی ماہ رمضان مبارک کی روانگی کی وجہ سے افسردہ ہورہے ہیں تو آپ اپنے اس گزرئے ماہ مبارک کے مہینے میں جو جو اچھے اعمال صالحہ کیے ان کو جاری و ساری رکھئیے اور پہلے سے بھی بڑھ کر اپنے اللہ سبحانی وتعالی کی قربت حاصل کرنے کی جستجو میں لگے جائیں۔
اس ماہ مبارک کا اختتام اللہ سبحانی وتعالی کی رضا و قربت حاصل کرنے کی نیت لیِے ایک نئے سفر کے آغاز سے کیجیے۔

سوچیئے گا ضرور۔۔۔
اور آگاہ ضرور کیجیئے گا کہ کیا رائے ہے آپ سب کی؟
پر جواب دینے سے پہلے ہم سب خود کو آئینہ میں ضرور دیکھنا ہو گا۔
حسبی اللہ لا الہ الا ھو علیہ توکلت وھو رب العرش العظیم (آیت 129، سورتہ توبہ – القرآن)
اللہ سبحان وتعالی ہم سب کو مندرجہ بالا باتیں کھلے دل و دماغ کے ساتھ مثبت انداز میں سمجھنے، اس سے حاصل ہونے والے مثبت سبق پر صدق دل سے عمل کرنے کی اور ساتھ ہی ساتھ ہمیں ہماری تمام دینی، سماجی و اخلاقی ذمہ داریاں بطریق احسن پوری کرنے کی ھمت، طاقت و توفیق عطا فرما ئے۔ آمین!

(تحریر – محترم محمد شیراز جاوید اعوان)

مندرجہ بالا تحریر سے آپ سب کس حد تک متفق ہیں یا ان میں کوئی کم بیشی باقی ہے تو اپنی قیمتی آراء سے ضرور آگاہ کر کے میری اور سب کی رہنمائی کا ذریعہ بنئیے گا۔ کیونکہ ہر شخص/فرد/گروہ/مکتبہ فکر کا اپنا اپنا سوچ اور دیکھنے کا انداز ہوتا ہے اور اس لیے ہمیں اس سب کی سوچ و نظریہ کا احترام ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے اس کی کسی بات/نکتہ کو قابل اصلاح پائیں تواُس شخص/فرد/گروہ/مکتبہ فکر یا ادارئے کی نشاندہی اور تصیح و تشریح کی طرف اُن کی توجہ اُس جانب ضرور مبذول کروائیں۔

نوٹ: لکھ دو کا اپنے تمام لکھنے والوں کے خیالات سے متفق ہونا قطعی ضروری نہیں۔
اگر آپ بھی لکھ دو کے پلیٹ فارم پر لکھنا چاہتے ہیں تو اپنا پیغام بذریعہ تصویری، صوتی و بصری یا تحریری شکل میں بمعہ اپنی تصویر، مکمل نام، فون نمبر، لنکڈان، فیس بک اور ٹویٹر آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعارف کے ساتھ admin@likhdoo.com پر ارسال کردیجیے۔

=====================================================================

Ramadan Reinspired: Day Twenty Nine…

Ramadan may be leaving, but don’t let it leave from within you.
Yes, sadly it’s almost over. Surely all of us feel the sadness, the emptiness and the bitter regret that we couldn’t make the most of it but it doesn’t have to be this way. We can experience the Ramadan vibes throughout the year by keeping up with the good deeds and abandoning the bad ones just like we did for the whole month.
Yes, the Tahajjud can continue. Yes, you can stay longer in Sujood. Yes, you can recite the Qur’an after every Salah. Yes, you can pray all the Nafl Salahs. Yes, you can cry to HIM subhana wa ta’ala. Yes, you can spend in HIS subhana wa ta’ala cause and yes, you can fast on Mondays & Thursdays as was the Sunnah of our Prophet sallahu wa alayhi wasalam.
If you are saddened by the departure of Ramadan, then continue to do the deeds that you did in this blessed month and attain a closeness to your ALLAH subhana wa ta’ala like never before.
Let the end of this month be the start of a new journey towards attaining the Pleasure of ALLAH subhana wa ta’ala .

Do Think About it!
And Let us Know What’s Your Opinion/Reviews?
But Before Answering, All of us have to Look Ourselves into The Mirror.
حسبی اللہ لا الہ الا ھو علیہ توکلت وھو رب العرش العظیم – القرآن سورتہ توبہ، آیت 129
Sufficient for me is Allah ; there is no deity except Him. On Him I have relied, and He is the Lord of the Great Throne. Al Quran – 9:129
O Allah! Give all of us the courage, strength and ability; that we get understand and act upon the Positive lesson in this message with positively open heart & mind. And sincerely follow all our religious, social and moral responsibilities as well. Aamen

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.