217

ہر جگہ خون ہی خون ہے مہکتا – شہدائے کشمیر ۔ ۔ ۔

87 سال پہلے آج ہی کے دن یعنی تیرہ جولائی 1931 کو جب سری نگر کی سنٹرل جیل کے باہر ایک نوجوان ظہر کی اذان دینے لگتا ہے تو ظالم ڈوگرا فوج اس نوجوان کو شہید کردیتی ہے۔ دوسرا نوجوان اٹھتا ہے اور اذان وہیں سے شروع کرتا ہے جہاں سے پہلے شہید نے چھوڑی تھی مگر اس دوسرئے نوجوان کو بھی شہید کردیا جاتہ ہے۔ اس کی جگہ تیسرا نوجوان لیتا ہے اور پھر ایسے ہی اکیس نوجوان شہید ہو کر اذان مکمل کرتے ہیں۔

کیا ہم ان شہدائے کشمیر کی قربانیوں کو بھلا دیں گے؟؟؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.